ایچ ای سی کے سابق چیئرمین ڈاکٹر عطا الرحمٰن کااہم بیان

کراچی(نمائندہ کریئر کاروان) ہائر ایجوکیشن کمیشن پاکستان کے سابق چیئرمین اور سابق وفاقی وزیر ڈاکٹر عطا الرحمن نے جامعہ کراچی میں خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چوتھاصنعتی انقلاب رونما ہورہا ہے، اس دور میں ترقی کا واحد ذریعہ سائنس وٹیکنالوجی کے شعبے میں عبور ہے۔ایچ ای سی کو دوبارہ سے اعلیٰ اختیاراتی اور خودمختار ادارہ بنانے کی ضرورت ہے۔ہائر ایجوکیشن کمیشن پاکستان کو اس کی اصل شکل میں بحال کرکے دوبارہ ایک خودمختار ادارہ بنایا جائے۔
ڈاکٹر عطا الرحمن نے کہا کہ پی پی پی کے دور حکومت میں اس کو وزار ت تعلیم کے ماتحت کردیا گیا اور اس کی حیثیت میں کمی واقع ہوئی،ایگزیکٹو ڈائریکٹر کے عہدے کا وفاقی سیکریٹری کے برابر کا درجہ بھی ختم کردیا گیا۔ ڈاکٹر عطاالرحمن نے کہا کہ دس کروڑ آبادی تیس سال سے کم عمر افراد پر مشتمل ہے، ہمارے پاس افرادی قوت کا بیش بہا سرمایہ موجود ہے جس کی صحیح سمت میں رہنمائی اور تربیت کرنا ہم سب کی قومی ذمہ داری ہے۔ چوتھاصنعتی انقلاب رونما ہورہا ہے، اس دور میں ترقی کا واحد ذریعہ سائنس وٹیکنالوجی کے شعبے میں عبور ہے۔ معدنی وسائل اب معاشی ترقی کے ضامن نہیں رہے آج کے دور میں صرف وہی قومیں ترقی کر رہی ہیں جن کے لیڈروں کوسائنسی و فنی علوم کی اہمیت اور افرادی قوت کے صحیح استعمال کا قرینہ آتا ہے اور انہوں نے علم پر مبنی معیشت کو اپنا لیا ہے۔انھوں نے بین الاقوامی اسٹوڈنٹس کنونشن کو سراہتے ہوئے کہا کہ ایسے پروگرامز کا انعقاد وقت کی اہم ضرورت ہے۔ مذکورہ پروگرام میں 30 سے زائد ممالک کے طلبا شریک ہوں گے جو یقینا لائق تحسین ہے۔
یادرہے کہ جب ڈاکٹر عطا الرحمن نے ایچ ای سی کا چارج سنبھالا تو کوئی بھی پاکستانی جامعہ ایشیاکی ٹاپ 250جامعات میں شامل نہیں تھی اور جب انھوں نے 2008ءمیں ایچ ای سی سے استعفیٰ دیا تو اس وقت پاکستان کی 4جامعات مذکورہ درجہ بندی میں شامل ہو چکی تھیں۔ دنیا کے اعلیٰ تعلیمی شعبے میں کبھی کسی ملک کی جامعات کی بین الاقوامی درجہ بندی اتنی تیزی سے نہیں بڑھی جتنی اُن کے دور میں اضافہ ہوا۔
اُن کا مزید کہنا تھا کہ حکومت کو چاہیے کہ ایک قومی مشاورتی ادارہ قائم کرے جس میں ملک کے سر فہرست سائنسدانوں اورانجینئرز کو نمائندگی دی جائے۔ یہ ادارہ ایک تھنک ٹینک کا کام کرے گا جو وزیر اعظم کو پاکستان کی روایتی معیشت کو علم پر مبنی معیشت کی جانب ڈھالنے میں مشاورت اور معاونت فراہم کرے گا۔