لاہور میں تعلیمی ایمرجنسی لگا دی گئی

 لاہور  میں تعلیمی ایمرجنسی لگا دی گئی

لاہور (کرئیرکاروان)سی ای او ایجوکیشن لاہور نے میٹرک کے خراب نتائج آنے کی وجہ سے لاہور بھر میں تعلیمی ایمرجنسی لگا دی۔ میٹرک کے خراب نتائج آنے کے بعد سی ای او ایجوکیشن نے تعلیمی عمل میں بڑی تبدیلی کردی ہے، تعلیمی اداروں میں اب رٹا سسٹم نہیں چلے گا، سی ای او ایجوکیشن پرویز اختر خان نے پانچویں جماعت سے بارہویں جماعت تک کے سکولوں میں کنسیپشن پڑھائی کو لازم قرار دے دیا ہے۔ اس سلسلہ میں سینٹرل ماڈل سکول ریٹیگن میں سی ای او ایجوکیشن کی سربراہی میں اجلاس کا انعقاد ہوا۔ اجلاس میں لاہور کے گریڈ 17 سے 19 تک کے تمام سینئر سبجیکٹ سپیشلسٹ اساتذہ نے شرکت کی، اس موقع پر سی ای او ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی نے تعلیمی ایمرجنسی چھ ماہ کے لیے لگانے کا اعلان کیا۔
اساتذہ کا کہنا ہے کہ اس عمل سے بچوں کو سیکھنے کا موقع ملے گا جبکہ رٹا سسٹم ختم ہونے سے بچوں کی صلاحیتوں میں نکھار پیدا ہوگا۔ کچھ اساتذہ کا کہنا تھا کہ اب رٹا سسٹم کی بجائے سبق کو سمجھنے کا شوق پیدا ہوگا۔ سی ای او ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی پرویز اختر خان نے کہا کہ تعلیمی ایمرجنسی 17 فروری تک جاری رہے گی۔