صرف 800 افراد کی آبادی والے خوبصورت ٹاؤن میں سالانہ 10 لاکھ سیاح آتے ہیں

صرف 800 افراد کی آبادی والے  خوبصورت  ٹاؤن میں سالانہ 10 لاکھ سیاح آتے ہیں
 
ہالشٹاٹ آسٹرین الپس میں واقع ایک چھوٹا سا خوبصورت ٹاؤن ہے۔ اس کی خوبصورتی کی وجہ سے سیاح اس کا رخ کیے بغیر نہیں رہتے۔بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق  عالمی ثقافتی ورثے میں شامل  800 افراد کی آبادی والے اس ٹاؤن میں سالانہ 10 لاکھ سیاح آتےہیں۔یہاں آنے والے سیاحوں کی تعداد میں پچھلے 10 سالوں میں کافی اضافہ ہوا ہے۔ اس ٹاؤن  میں آنے والے سیاحوں کی زیادہ تعداد کا تعلق چین سے  ہوتا ہے۔ یہ ٹاؤن چین میں اس قدر مقبول ہے کہ چینیوں نے 2012 میں اپنے ملک میں اس کی ہو بہو نقل بنائی ہے، جس میں اسی طرح گرجا اور چوراہے بنائے گئے ہیں۔ ہالشٹاٹ میں سیاحوں کی آمد اگرچہ مالی اعتبار سے اس ٹاؤن کے لیے فائدہ مند ہے لیکن یہاں کے رہائشی اس قدیم ٹاؤن میں بہت زیادہ سیاحوں کا آنا پسند نہیں کرتے۔
ہالشٹاٹ قبل از تاریخ سے ہی  نمک کی پیداوار میں مشہور ہے۔
ہالشٹاٹ  میئر ، الیگزینڈر سچوئیٹز، کا کہنا ہے کہ سیاحت سے وہ مالی طور پر خودمختار ہو گئے ہیں۔ تاہم گاؤں کے لوگوں کا کہنا ہے کہ  یہاں  آنے والا سیاح بہت تھوڑے وقت کے لیے آتےہیں، جس سے یہاں پر رش بہت زیادہ بڑھ جاتا ہے، جو یہاں رہنے والے لوگوں کے لیے اچھا نہیں ہے۔ ہالشٹاٹ کے لوگوں کا منصوبہ ہے کہ یہاں آنے والی سیاحوں کی بسوں کی تعداد محدود کر دیا جائے۔