میراتھن ریس کے دوران ہی کھلاڑی کو شدید ڈائریا ہوگیا پھر بھی ریس جیت لی

شنگھائی (کرئیر کاروان) میراتھن ریس کے دوران ہی کھلاڑی کو شدید ڈائریا ہوگیا اور وہ دست روکنے میں کامیاب نہ ہوسکے تاہم اپنی کیٹگر ی میں اس سب کے باوجود جیت گئے ۔
 
غیرملکی میڈیا کے مطابق پیلی شرٹ میں موجود وو ژیانگ ڈونگ کا شمار شنگھائی انٹرنیشنل ہالف میراتھن میں شامل اہم چینی کھلاڑیوں میں تھا جنہوں نے ایک گھنٹہ چھ منٹ اور سولہ سیکنڈ میں منزل تک پہنچنے میں کامیابی سمیٹی اور اس کاکہناہے کہ دوتہائی راستے میں نہ بیٹھنے کی صورت میں وہ مزید اچھا پرفارم کرسکتاتھا، دس کلومیٹر کا سفر طے کرنے کے بعد اس کے معدے میں کچھ گڑ بڑ ہوئی اور چودہ کلومیٹر تک ایسے ہی چلتارہاتاہم اس کے بعد وہ قابو نہ پاسکا۔مزید چار کلومیٹر کا سفر طے کرنے کے بعدبھاگتے ہوئے دست نکلے اورپھر کچھ بہتر محسوس کرنے لگا۔ رپورٹ کے مطابق فنشنگ لائن کے قریب پہنچ کر کپڑوں میں آنیوالے اضافی وزن سے وو کی رفتار پر کوئی فرق نہیں پڑا جہاں وہ ایک افریقی کھلاڑی کے مدمقابل تھے اورریس جیتنے کے بعد فوری طورپر ٹائلٹ بھاگ گیا۔ ریس جیتنے کے موقع پر وو کاکہناتھاکہ اسے معلوم نہیں، کس وجہ سے ڈائریا ہوا ، صرف بریڈ کے ایک ٹکڑے سے زیادہ کچھ کھایا ہی نہیں، ریس شرو ع ہونے سے قبل ایک بوتل پانی پیاتھا۔رپورٹس کے مطابق وو چین کا تیز ترین رنز ہوسکتا ہے تاہم ہالف میراتھن کو بیان کرتے ہوئے اس کا کہناتھاکہ ” میں بدبو کیساتھ نہیں رہ سکتا“