پاکستانی سائنسدانوں کا کارنامہ

لاہور(نمائندہ کریئر کاروان) یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز (یو ایچ ایس) کے سائنسدانوں نے مصنوعی جلد کی تیاری ( سکن کلوننگ ) میں کامیابی حاصل کرلی ہے۔یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز (یو ایچ ایس) میں پانچویں سالانہ اناٹومی سائنٹفک کانفرنس سے بطور مہمان خصوصی وزیر صحت پنجاب پروفیسر ڈاکٹر یاسمین راشدنے یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسزکے سائنسدانوں کی سکن کلوننگ میں کامیابی پر یو ایچ ایس کے وائس چانسلر پروفیسر جاوید اکرم اور ان کی ٹیم کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ یونیورسٹیوں میں ریسرچ پر مبنی تعلیم وقت کی ضرورت ہے۔ خوش ہوں کہ یو ایچ ایس کے سائنسدانوں نے بائیولوجیکل سکن ایجاد کرلی۔وزیر صحت پنجاب پروفیسر ڈاکٹر یاسمین راشدنے بتایا کہ جیو بائیولوجیکل سکن پہلے ہزاروں ڈالرز میں بیرون ملک سے منگوانا پڑتی تھی اس کی جگہ اب پاکستان میں وہی جلد 720روپے میں دستیاب ہوگی۔پاکستان میں کلون شدہ بائیولوجیکل سکن انتہائی سستی ہے۔ 720 روپے میں مصنوعی جلد ایک اہم پیشرفت ہے۔ کانفرنس کا اہتمام اناٹومیکل سوسائٹی آف پاکستان نے کیا تھا۔ وائس چانسلر پروفیسر جاوید اکرم، صدر پی ایم اے پنجاب ڈاکٹر اظہار، صدر اے پی ایس پروفیسر نوشین عمر نے بھی خطاب کیا۔
پروفیسر یاسمین راشد نے کہا کہ سائنٹفک کانفرنس نوجوان ڈاکٹروں کے لئے سیکھنے کا سنہری موقع ہے۔میڈیکل تعلیمی اداروں میں اساتذہ کی کمی کا مکمل احساس ہے۔ فکلیٹیز کی کمی دور کئے بغیر میڈیکل تعلیمی اداروں کی استعدادکار بہتر نہیں ہوسکتی۔ پروفیسرز کی مراعات بہتر کی جارہی ہیں۔ بطور ڈاکٹر میں ڈاکٹر کمیونٹی کے مسائل اچھی طرح سمجھتی ہوں۔ ڈاکٹر مریضوں کے مسائل حل کریں، ان کے مسائل کا حل میری ذمہ داری ہے۔ وزیر صحت نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ سابق پنجاب حکومت کے جاری کردہ 80ارب روپے کے چیک ڈس آنر ہوگئے جن کو موجودہ حکومت نے آنر کرایا۔انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت کا بجٹ کسی اورنج ٹرین یا دیگر منصوبوں پر ہرگز نہیں لگانے دوں گی۔ میں اپنے بچوں کو زندگی گزارنے کے قابل بنا کے سیاست میں آئی اور مجھے سیاست کو اولاد کے فائدے کے لئے استعمال کرنے کی کوئی ضرورت نہیں۔زندگی میں پیسہ ہی سب کچھ نہیں ہوتا۔مریضوں سے اچھا رویہ ایک ڈاکٹر کی شان ہے۔ وزیر صحت تقریب میں پروفیسرز اور ڈاکٹروں میں شیلڈز بھی تقسیم کیں۔