بیٹے کوکالج سے نکالنے پر سپریم کورٹ سے کس نے رجوع کیا؟

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں2 رکنی بنچ نے کشمالہ طارق کے بیٹے کو ا یچی سن کالج سے نکالنے کے خلاف درخواست پرسماعت کی، کشمالہ طارق نے عدالت کو بتایا کہ ان کے بیٹے کو ایچی سن کالج انتظامیہ نے معمولی غلطی پر کالج سے نکال دیا ہے لہٰذا معاملے کا نوٹس لیا جائے اور بیٹے کو کالج میں دوبارہ داخل کرنے

 کاحکم دیا جائے۔
عدالت نے سابق ایم این اے کشمالہ طارق کی استدعا مسترد کر تے ہوئے انہیں داد رسی کے لئے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے کہ بچوں کی چھوٹی موٹی لڑائیوں کو نظر انداز کرنا چاہئے۔
چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے درخواست کی سماعت کے بعد قرار دیا کہ اگر ہائیکورٹ سے رجوع کرنے پر کچھ غلط ہوتا تو وہ سپریم کورٹ سے رجوع کریںتا ہم آپ کی دادرسی لاہور ہائیکورٹ کے ہی دائرہ اختیار میں ہے۔