کچرا چننے والا بے گھرشخص دانش ور نکلا

 چین سے تعلق رکھنے والا ایک بے گھر شخص دیکھتے دیکھتے ہی انٹرنیٹ پر دانشور مشہور ہو گیا،اپنے وسیع مطالعے کی بناء پروہ آج شہرت کی بلندیوں کو چھو رہے ہیں 

شین وئی 10 سال سے سڑکو ں پر کسمپرسی کی زندگی گزار رہے تھے۔ شین وئی شنگھائی سے تعلق رکھنے والے ہیں ۔ چند روز قبل ان کی کچھ ویڈیوز جن میں شین وئی سولہویں صدی کے چینی فلسسفی کنفیوشس اور لیاؤ فین کے خیالات کا ذکر کرتے ہوئے دیکھے جا سکتے ہیں۔

ایک دانشور کو اس دربدری کے حالات میں دیکھ کر لوگ حیران رہ گئے۔ ان کی ویڈیوز کو دیکھنے والوں کی تعداد لاکھوں میں ہے۔

شین وئی کہتے ہیں کہ مجھے شہرت پسند نہیں ہے اور ایک تنہائی والی زندگی گزارنا پسند کرتا ہوں۔

چینی خبر رساں ادارے سے بات کرتے ہوئے شین وئی کا مزید کہنا تھا کہ میں اب بوڑھا ہوتا جا رہا ہوں اور اپنا انجام جانتا ہوں۔

شین کے بارے میں قیاس ہے کہ وہ پہلے بطور سول سرونٹ کام کیا کرتے تھے۔

رپورٹ کے مطابق چین کے سرکاری اداروں کی جانب سے تصدیق کرتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ شین نامی ملازم نے بیماری کے باعث 26 سال قبل چھٹی لی تھی تاہم وہ اب بھی باقاعدگی سے مشاہرہ وصول کر رہا ہے۔

شین وئی کہتے ہیں کہ انہوں نے ایک سخت زندگی گزاری ہے اور اپنی پڑھائی کے لیے سڑکوں سے کچرا چننے کا کام کیا ہے اور انہیں بیچ کر کتابیں خریدی ہیں۔

بعد ازاں کچرا چننا شین وئی کی عادت بن گیا۔ ان کے مشغلوں میں کچرا الگ الگ کرنا، مطالعہ کرنا، ڈرائنگ کرنا اور آوارہ بلیوں کا خیال رکھنا شامل ہے۔

شین وئی 2002 سے اپنے فلیٹ سے نکالے جانے کے بعد سے سڑکوں پر ہیں۔