پنجاب یونیورسٹی: یونیورسٹیوں کا قیام امن میں کردار کے عنوان سے پینل ڈسکشن کا اہتمام کیا گیا

پنجاب یونیورسٹی: یونیورسٹیوں کا قیام امن میں کردار کے عنوان سے پینل ڈسکشن کا اہتمام کیا گیا 
لاہور (پ ر)پنجاب یونیورسٹی کے انسٹویٹ آف بزنس ایڈمنسٹریشن میں   آئیڈیا کے باہمی اشتراک سے یونیورسٹیوں کا قیام امن میں کردار کے عنوان سے پینل ڈسکشن کا اہتمام کیا گیا ۔انسٹیوٹ فار ڈیموکریٹک ایجوکیشن اینڈ ایڈوکیسی (آئیڈیا) کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر سلمان عابد نے کہا کہ معاشرے میں قیام امن کے فروغ میں جامعات کے اساتذہ اور طلبا کا کردار بہت اہمیت کا حامل ہے ۔جب تک جامعات میں نصابی سرگرمیوں کے ساتھ غیر نصابی سرگرمیوں پر توجہ اور مکالمہ کا کا کلچر پروان نہیں چڑھتا ۔تب تک طلبہ معاشرے کی ترقی میں موثر کردار ادا کرنے کے قابل نہیں ہوسکتے ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ جامعات میں مختلف صوبوں ،شہروں اور علاقوں کا بیک گرائونڈ  رکھنے والے طلبہ جس باہمی بھائی چارے،سماجی ہم آہنگی اور روادری کی مثال پیش کررہے ہیں وہ بہت خوش آئند ہے ۔معاشرے کے قیام کے بنیادی غرض وغایت امن ،قبولیت اور بقائے باہمی مقصود ہیں ۔لوگ ایک دوسرے سے تعلقات بہتر کریں چنانچہ اس مقصد کے اجتماعی کوشش کی جائے اگر اس سلسلہ میں کوئی رکاوٹ ہوتو اس کو دور کیا جائے ۔ہم اس وقت عدم برداشت کے دور سے گزر ررہے ہیں ہمیں مسلکی و علاقائی تفریق کو ختم کرکے آگے بڑھنا ہوگا ۔ثقافتی ،مذہبی اور لسانی اعتبار متنوع معاشرے ترقی کے لئے بہت ضروری ہیں ۔اساتذہ کرام نئی نسلوں کی ذہن سازی میں کلیدی کردار ادا کرتے ہییں ۔ہمیں یہ سمجھنا چاہئے کہ ہم پنجابی ،سندھی ،بلوچ ،پختون نہیں بلکہ پاکستانی ہیں اور سب سے بڑھ کر انسان ہیں ہمیں ایک دوسرے کے خیالات کو یکساں اہمیت دینی ہے جب تک ایک دوسرے کے خیالات کوسنیں گے نہیں تب تک معاشرے میں مکالمہ کا کلچر پروان نہیں چڑھتا سماجی ہم آہنگی و رواداری کا کلچراس لئے ضروری ہے کہ ہم معاشرے کو درپیش انتہا پسندی جیسے چیلنجز کا مقابلہ کرسکیں۔ ۔لبیبہ شیخ ڈائریکٹر آئی بی اے نے کہا کہ ہم طلبہ میں برداشت و روادری پیدا کرنے اور مکالمہ کا کلچر عام کرنے کے لئے مختلف سیمینارز و کانفرنسز کا اہتمام کرتے ہیں تاکہ طلبا کو مختلف خیالات جاننے کا موقع بھی مل سکے اور طلبا و طالبات میں برداشت و روداری ، سماجی ہم آہنگی جیسے احسن رویے پیدا ہو اور ہمارا معاشرہ مجموعی طور پر امن کا گہوارہ بن سکے ۔ دیگر مقررین نےبرداشت ،رواداری و سماجی ہم آہنگی کے فروغ ،مکالمہ کے کلچر پر تفصیل سے روشنی ڈالی ۔اس موقع پر طلبہ نے سوال و جواب کے سیشن میں اس حوالے سے سوالات کئیے جن کے مقررین نے جوابات دئیے ۔اس موقع پر طلبہ و فکیلٹی ممبران کی کثیر تعداد موجود تھی